kabhi parcham mein lipte hain lyrics atif aslam 228

کبھی پرچم میں لپٹے ہیں کبھی ہم غازی ہوتے ہیں عاطف

Hil jaati hai har dastakh par
Maa ko lagta hai main aaya

ہل جاتی ہےہر دستک پر
ماں کو لگتاہے میں آیا
کوئی پیارا ہے مجھے آپ سے بھی
میں بابا سے یہ کہہ آیا

گھربھرہے میرا بھی پیچھے
پرآگے بھی گھرمیراہے
میں جی لوں گا اندھیروں میں
پر میرے بعد سویرا ہے
اسں گھر کی ساری خوشیوں کو
اک بار نا گھبرانے دے گا
اک سوچ بری بھی سرحد سے
اسں پار نہیں آنے دے گے
کبھی پرچم میں لپٹے ہیں
کبھی ہم غازی ہوتے ہیں
جو ہو جاتی ہے ماں راضی
تو بیٹے راضی ہوتے ہیں

Kabhi parcham mein lepte hai
Kabhi hum ghazi hote hai

کبھی پرچم میں لپٹے ہیں
کبھی ہم غازی ہوتے ہیں
جو ہو جاتی ہے ماں راضی
تو بیٹے راضی ہوتے ہیں

اپنی رائے دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں