dispute in making school building 78

مٹھی : اسکول کی بلڈنگ بنانے پر تنازعہ ، شکایت پر محستب اعلی کے ریجنل ڈائریکٹر کا دورہ۔

مٹھی : اسکول کی بلڈنگ بنانے پر تنازعہ ، شکایت پر محستب اعلی کے ریجنل ڈائریکٹر کا دورہ۔

مریم صدیقہ نیوز ڈائریکٹر انقلاب نیوز حیدرآباد

ریجنل ڈائریکٹر محتسب نے محکمہ تعلیم سے اسکول بنانے کے حوالے سے رکارڈ طلب کرلیا۔
کلوئی تحصیل کے گائوں بھکڑیو میں اسکول کی نئی بلڈنگ کی تعمیر اور سیمیز کوڈ کی تبدیلی کی شکایت پر محستب اعلی کے ریجنل ڈائریکٹر ظفر الحق خان نے گائوں بھکڑیو کا دورہ کیا اور گائوں میں موجود اسکولوں اور نئے اسکول کی عمارت کاجائزہ لیا۔اس موقعے پر ڈی ای او تعلیم حبیب اللہ،ٹی ای او کلوئی کنگھار سنگھ اور ٹی ای او ڈیپلو میوارام بھی موجود تھے۔

اس موقعے پر مقامی رھائشیوں نے بتایا کہ پیپلزپارٹی کلوئی کے تعلقہ جنرل سیکریٹری اکبر عادل بلاجواز سیاسی مخالفت پر اسکول کی تعمیر رکوا رہا ہے۔سیکریٹری کا والد ٹیچر ہے جو اسکول میں بچوں کو نہیں پڑھاتا اس لیے ہم نے اپنے محلے میں خیمہ لگا کر رضاکار ٹیچر مقرر کرکے اسکول شروع کیا ہوئا ہے اور اس وقت اسکول کی ایک روم کی عمارت کی اسکیم ملی ہے تو مختلف الزامات لگا کر اسکول کی تعمیر رکوانا چاہتا ہے۔

انہوں نے محستب اعلی کے سامنے الزام لگایا کہ پی پی پی رھنما نے آر او پلانٹ پر قبضہ کررکھا ہے اور گائوں کے رھائشیوں کو بلاجواز تنگ کرتا رہتا ہے۔ریجنل ڈائریکٹر نے گائوں کے تمام اسکولوں کا دورہ کیا اور مقامی رھائشیوں سے تفصیلات معلوم کیے۔

اس موقعے پر ٹی ای او تعلیم کنگھار سنگھ نے ریجنل دائریکٹر کو بتایا کہ اسکول کا 2014 میں سیمیز کوڈ گائوں جھپیو سے تبدیل کرکے بھکڑیو میں رکھا گیا ہے اس کے بنیاد پر ہی اسکول کی عمارت بنانے کی اجازت دی ہے۔

محتسب اعلی کے ریجنل ڈائریکٹر ظفر الحق خان نے محکمہ تعلیم سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے اور کہا کہ سیمیز کوڈ کی تبدیلی کے ثبوت پیش کیے جائیں۔اس موقعے پر پیپلزپارٹی کے جنرل سیکریٹری اکبر عادل نے کہا کہ اسکول کی عمارت ڈیپلو کے گائوں جھپیو کے سیمیز کوڈ پر ہے اس لیے عمارت منظورہ شدہ گائوں جھپیو میں ہی بنائی جائے اور ھمارے گائوں میں تین پرائمری موجود ہیں اس لیے مزید عمارتوں کی ضرورت نہیں ہے۔

اس عمارت کو گائوں جھپیو میں بنایا جائے۔محستب اعلی کے ریجنل ڈائریکٹر نے ھاء اسکول کا بھی دورہ کیا اور وہاں 11 استادوں کی مقرری اور اسکول میں صرف 30 شاگردوں کی موجود ہونے پر برھمی کا اظھار کرتے ہوئے ذمیوار افسراں سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔

اپنی رائے دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں