conference for women education 38

ننگرپارکر:لڑکیوں کی تعلیم کی بدتر صورتحال پر تھر ایجوکیشن الائینس کی جانب سے کانفرنس منعقد

ننگرپارکر:لڑکیوں کی تعلیم کی بدتر صورتحال پر تھر ایجوکیشن الائینس کی جانب سے کانفرنس منعقد
مریم صدیقہ نیوز ڈائریکٹر انقلاب نیوز حیدرآباد

پی ایس 55 ننگرپارکرمیں
تعلیم کی بدتر صورتحال، سرکاری رکارڈ میں 236 اسکول بند ہیں اورلڑکیوں کی تعلیم نہ ہونے کے برابر ہےلیں ،تمام صورتحال کےزمیوار منتخب نمائندہ قرار.

تھرپارکر کی تحصیل ننگرپار پی ای 55 میں لڑکیوں کیی تعلیم کی صورتحال پر تھر ایڈیوکیشن الائینس کی جانب سے کانفرنس منعقد کی گئی جس میں مختلف علاقوں کے رہائشوں اور سول سوسائٹی کے رھنمائوں نے شرکت کی اد موقعے پر الائنس کے رھنما پرتاب شیوانی نے بریفنگ دیتے کہا کہ ننگرپارکر کے حلقے میں 1068 اسکول ہیں جس میں سے محکمہ تعلیم کے مطابق 236 اسکول بند ہیں اور لڑکیون کے 120 اسکول بند ہیں جبکہ ہم نے جو جائزہ لیا ہے تو لگتا ہے تین حصہ اسکول بند ہیں جبکہ لڑکیوں کی تعلیم نہ ہونے کے برابر ہے۔اس حلقے میں صرف ایک ھاء اسکول ہے اس میں صرف ایک ٹیچر ہے اور مڈل اسکول میں صرف پانچ ہیں۔اس طرح کی روش سے واضع ہوتا ہے کہ حکومت اور علاقے کے منتخب نمائندے نہیں چاہتے کہ علاقے کے بچوں کو تعلیم دی جائے۔انہوں کہا کہ سرکاری اعداد شمار کے مطابق 45 فیصد بند اسکول ہیں،علاقے کے
99 فیصد اسکول بجلی۔ 95 پانی اور 78 فیصد ٹوائلٹ کی سہولیت سے محروم ہیں جبکہ تھرپارکر کی سالانہ تین ارب بجٹ تعلیم پر خرچ ہورہی ہے۔سہولیات کے کمی اور اساتذہ کی عدم موجودگی سے کس طرح تعلیم ملے گی۔تقریب میں مختلف سیاسی اور سماجی کارکنوں نے منتخب نمائندوں پر شدید تنقید کرتے کہا کہ اس حلقے میں ہر بار غیر مقامی نمائندے منتخب کرائے جاتے ہیں اس لیے وہ کسی بھی مسئلے کے حل میں دلچسپی نہیں لیتے ۔تعلیم کی بدتر حالت کی ذمیوار منتخب نمائندے ہیں ۔تقریب میں مختلف گائوں کے لوگوں کے بند اسکول۔اساتذہ کے روزانہ بنیادوں پر تبادلے اورایس ایم سی فنڈز میں کرپشن کی شکایتیں کی گئیں۔مقامی باشعور نے پارلیامیانی پارٹیوں سے مطالبہ کیا کہ لڑکیوں کی تعلیم پر توجہ دیں اور علاقے کی بہتری کا بھی سوچا جائے آنے والے الیکشن میں ٹکٹ بھی مقامی لوگوں کا دیا جائے۔تقریب کو غنی کھوسو،گھنشام مالہی،صدیق راہموں،نازیہ کھوسو،مورو مل،مھادیو مکوانہ،ساتھی سومجی سمیت دیگران نے اپنی خیالات کا اظھار کیا

اپنی رائے دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں