bilawal bhutto zardari 12

تھر نے پاکستان کی اقتصادی ترقی کو ایک نیا جنم دیا ہے. بلاول بھٹو زرداری.

تھر نے پاکستان کی اقتصادی ترقی کو ایک نیا جنم دیا ہے. بلاول بھٹو زرداری

مریم صدیقہ نیوز ڈائریکٹر انقلاب نیوز حیدرآباد

اسلام کوٹ ( بدھ، ۱۱ اپریل ۲۰۱۸) پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ پاکستان میں اقتصادی ترقی کا نیا سورج طلوع ہونے والا ہے، جس کی بنیاد تھر کول منصوبے نےڈال دی ہے اور پاکستان میں اقتصادی ترقی کو ایک نیا جنم دیا ہے، سندھ حکومت، اینگرو اور دیگر پاکستانی اور بین الاقوامی کمپنیوں کی شراکت داری میں جاری پبلک پرائیویٹ پارٹنر شپ کا تھر کول بلاک ٹو کا یہ ماڈل شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کے خواب کی تکمیل ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز تھر کول بلاک ٹو کے تفصیلی دورہ کرنے کے بعد ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ دورے کے دوران وزیر اعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ، سینئر وزیر نثار کھڑو، صوبائی وزیر ناصر شاہ، سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کے چیئرمین خورشید جمالی، سربراہ شمس الدین شیخ، اینگرو کارپوریشن کے صدر غیاث خان اور دیگر وفد میں شامل تھے، بلاول بھٹو نے تھر کول بلاک ٹو میں سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کی مائننگ، اینگرو پاورجین تھر کے 660 میگاواٹ کے بجلی گھر اور تھر فائونڈیشن کے مختلف ترقیاتی اسکیموں کا بھی دورہ کیا، بلاول بھٹو ماروی کلینک، سٹیزن فائونڈیشن اسکول اور کھارے پانی پر زرعی فصلیں کاشت کرنے والے منصوبوں کا بھی تفصیلی دورہ کیا. پیپلزپارٹی چیئرمین سینھری درس ری سیٹلمینٹ ولیج میں ایک چھوٹی سی تقریب میں مقامی رہائشی غلام مصطفی درس کو نئے تعمیر شدہ گھر کی چابی بھی دی اور گھر میں پودہ بھی لگایا۔ یہ گھر تھر کول بلاک ٹو کے 172 متاثرین کو دیئے جارہے ہیں جوکہ رواں سال کی آخر میں شفٹ ہونگے، مرکزی تقریب سے خطاب کرتے بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ بلوچستان اور پنجاب قدرتی وسائل کے حوالے سے مالامال صوبے ہیں لیکن ابھی تک اسے سے ثمرات حاصل نہیں کیا جاسکا ہے لیکن پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت تھرپارکر میں کوئلے جیسے اہم ذریعے سے بجلی پیدا کرنے جارہی ہےلیکن اس کے باوجود ہمارے سیاست دان، سول سوسائٹی اور میڈیا ہمارے ساتھ ناانصافی کرتے ہوئے تھرپارکر میں ہونے والی ترقی اور انقلاب کے حوالے سے پاکستان کے لوگوں کو نہیں بتانے سے کتراتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تھر فائونڈیشن تعلیم، صحت مقامی کاروبار کو ترقی دلانے سمیت تھر کی قسمت بدلانے والی بائیو سیلائن زراعت کے منصوبوں میں غیر معمولی کام کر رہی ہے، اور اسی طرح کوئلے کے کان سے زیرزمین کھارے پانی سے مچھلی کی افزائش کے کامیاب تجربے کر لیے ہیں، انہوں نے کہا کہ تھر کول بلاک ٹو کا منصوبہ ہم پراعتراض کرنے والوں کو جواب ہے، کیونکہ وہاں کے مقامی لوگوں کو فائدہ مل رہا ہے اور 71 فیصد سے زائد نوکریاں مقامی تھریوں کو دی گئی ہیں۔ تقریب کو خطاب کرتے ہوئے وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ تھر کول بلاک ٹو منصوبے کے نتیجے میں آج غیرمعمولی اقتصادی سرگرمی ہو رہی ہے جوکہ نہ صرف شہید محترمہ بے نظیر بھٹو کا خواب تھا پر انہوں نے خود 1995 میں اس منصوبے کو شروع کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے بعد میں آنے والی حکومتوں نے اس منصوبے کو اہمیت نہیں دی پر ہم سیدھے راستے پر ہیں، تھر کول منصوبہ پاکستان کی تقدیر بدل دے گا. تقریب کے دوران نامور کرکٹر شاھد آفریدی فائونڈیشن کے سربراہ شاھد آفریدی تھر فائونڈیشن کو دس کروڑ روپے کا چیک بھی دیا، جو رقم اسلام کوٹ میں 250 بیڈز کی ہسپتال کی تعمیر پر خرچ کیے جائیں گے، اس سے پہلے سندھ اینگرو کول مائننگ کمپنی کے سربراہ شمس الدین شیخ نے خطاب اور بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ تھر کول منصوبے کے اصل مالکان تھر کے لوگوں کو سمجھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کول کے کان کی کھدائی 125 میٹر تک پہنچ چکی ہے اور بجلی پیدا کرنے کے لیے اصل کوئلہ صرف 20 میٹر کی دوری پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ کوئلے کی سپلاءِ شروع ہونے کے بعد رواں سال کی آخر تک ہم بجلی پیدا کرنے میں کامیاب ہو جائیں گے اور نیشنل گرڈ میں بھی سپلاءِ شروع ہو جائے گی.

اپنی رائے دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں